اتنا معلوم ہے ، خوابوں کا بھرم ٹوٹ گیا

اتنا معلوم ہے ، خوابوں کا بھرم ٹوٹ گیا اپنے بستر پہ میں بہت دیر سے نیم دراز سوچتی تھی کہ وہ اس وقت کہاں پر ہوگا میں یہاں ہوں مگر اُس کوچہء رنگ و بو میں روز کی طرح مزید پڑھیں